45

خبردار ہوشیار: بڑا خطرہ سر پر ہے۔۔۔میجر جنرل آصف غفور نے قوم کو خبردار کر دیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) شمالی وزیرستان کے تاجروں اور اداروں کے درمیان کے مذاکرات کامیاب ہوگئے ،5 روز سے جاری دھرنا ختم کر دیا گیا ہے، معاہدہ پر دستخط کر دیئے گئے، تاجروں کے نقصانات کے تخمینہ کے لئے سروے کرایا جائے گا، اعلیٰ عسکری قیادت سے تاجروں نے اظہار تشکر کیا ہے،

تاجروں کے تمام مطالبات منظو کر لئے گئے، شمالی وزیرستان کے مسئلہ کے حل کے لئے مذاکرات کے سلسلے میں ہنگامی طور پر ڈی جی آر ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور اسلام آباد آئے، نیشنل پریس کلب اسلام آباد کے باہر شمالی وزیرستان کے عمائدین اور متاثرہ تاجروں کے نمائندہ وفد سے چار گھنٹے تک مذاکرات کئے، پولیٹکل انتظامیہ نے پاک فوج کے ترجمان کی معاونت کی، رات گئے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے قبائلی تاجروں نے ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور سے ملاقات کی تصدیق کی جو چار گھنٹے جاری رہی جس میں تاجروں نے اپنے مطالبات پیش کیے، وفد کے زر تلافی کی ادائیگی سے متعلق مطالبات بھی منظور اور شمالی وزیرستان کے مسئلہ کے حل کے لئے بھی مذاکرات ہوئے ، شمالی وزیرستان کے متاثرین کو مسائل کے حل کی یقین دہانی کروائی گئی ہے۔تاجر راہنمائوں نے بتایا کہ معاہدہ پر عمل کے لئے مزید بات چیت شمالی وزیرستان ایجنسی میں ہو گی اور نقصانات کے ازالہ کے لئے طریقہ کار وضع کیا جائے گا۔دھرنا ختم کر دیا گیا ہے۔ میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ ریاست اور سکیورٹی فورسز متاثرہ افراد کی بحالی کیلئے پرعزم ہیں، آپریشن کے بعد زندگی معمول پر لانا حکمت عملی کا حصہ ہے،

یہ ہمارا گھر ہے، ملکر زندگی کو معمول پر لائیں گے۔ دشمن قوتوں کی غیر یقینی صورتحال پیدا کرنے کی کوششوں سے آگاہ رہنے کا وقت ہے۔ دشمن قوتیں اپنی کوششوں میں کامیاب نہیں ہوں گی۔ شمالی وزیرستان کے متاثرہ تاجروں کی مقامی سول و فوجی قیادت سے 22 اپریل کو ملاقات ہوگی۔ ملاقات کے دوران فاٹا سیکرٹریٹ کے نمائندے بھی ہوں گے۔ فاٹا کو قومی دھارے میں لانا ان کی خوشحالی اور طاقتور بنانے کی بنیاد ہے۔ علاقے کو صاف کرنے کے چیلنجز کے ساتھ ہولڈ اینڈ بلڈ کا مرحلہ جاری ہے، یہ ہمارا گھر ہے، ملکر رفتہ رفتہ مکمل امن لائیں گے۔ یہ وقت دشمن قوتوں سے خبردار رہنے کا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں