2,715

کلثوم نواز کا انتقال ۔۔۔۔؟مریم نواز نے بڑی بریکنگ نیوز دے دی

لندن (ویب ڈیسک) پاکستان کے نااہل قرار دیئے گئے سابق وزیراعظم نواز شریف کی بیٹی مریم نواز نے کہا ہے کہ اللہ میری والدہ کلثوم نواز کی بیماری کے حوالے سے جھوٹی خبریں پھیلانے والوں کو نیک ہدایت دے۔ ہارلے سٹریٹ کلینک کے باہر پاکستانی میڈیا سے باتیں کرتے ہوئے انھوں نے

کہا کہ ان کی والدہ وینٹی لیٹر پر ہیں اور ان کی حالت نازک ہے۔ انھوں نے کہا کہ ڈاکٹروں نے کلثوم نواز کو وینٹی لیٹر پر رکھا ہوا ہے اور اس کیلئے کوئی وقت نہیں بتایا ہے کہ انھیں کب تک وینٹی لیٹر پر رکھا جائے گا۔ ان سے جب سوشل میڈیا پر ان کی والدہ کے حوالے سے چلنے والی خبروں کے بارے میں سوال کیا گیا توانھوں نے کہا کہ اللہ ہی ایسے لوگوں کو ہدایت دے سکتا ہے۔ واٹس ایپ اور سوشل میڈیا فورمز پر بیگم کلثوم نواز کے علاج کے بارے میں شکوک وشبہات پھیلائے جا رہے ہیں۔ دوسری جانب نواز شریف کے بڑے بیٹے حسین نواز نے اس بات کی سختی سے تردید کی کہ ان کی والدہ کا انتقال ہوچکا ہے۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق لندن میں زیرعلاج نوازشریف کی اہلیہ کلثوم نواز کو وینٹی لیٹر ہٹانے کا فیصلہ نہ کیاجاسکا، حالت بدستور تشویشناک ہے،میاں نوازشریف مریم نواز اور حسن نواز تیمارداری کے لیےلندن میں موجود ہیں ۔ڈاکٹرز سے مشورے کے بعد نواز شریف اور مریم نواز نے وطن واپسی مؤخر کردی ہے، وہ 19جون کو احتساب عدالت میں پیش نہیں ہوں گے۔لندن کے ہارلے کلینک کے ڈاکٹرز نے سابق وزیراعظم نواز شریف ،حسین نواز اور

مریم نواز کو بیگم کلثوم نواز کی صحت کے بارے میں دو گھنٹوں تک بریفنگ دی۔ذرائع کے مطابق ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ بیگم کلثوم نواز کی طبیعت میں بہتری کی مانیٹرنگ کررہے ہیں اور انہوں نے نواز شریف کو اپنی اہلیہ کے ساتھ زیادہ سے زیادہ وقت گزارنے کا مشورہ دیا ہے، ڈاکٹرز کے مشورے کے بعد نوازشریف،مریم نواز نےفی الحال وطن واپسی مؤخرکردی،اب ان کی پاکستان واپسی بیگم کلثوم نواز کی صحت سے مشروط ہوگی۔نوازشریف،مریم نوازکےوکیل عدالت میں حاضری سےاستثنیٰ کی درخواست دیں گے، درخواست میں بیگم کلثوم نواز کی میڈیکل رپورٹ اور ڈاکٹرز کا خط بھی درخواست کے ساتھ جمع کرایا جائے گا،بیگم کلثوم نواز کی میڈیکل رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ڈاکٹرز نے فی الحال بیگم کلثوم نواز کو لائف سپورٹ مشین سے نہ ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے۔حسین نواز نے لندن میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ان کی والدہ کلثوم نواز ہوش میں نہیں ہیں اور ڈاکٹرز بہتری کےلیے پوری کوشش کر رہے ہیںبیگم کلثوم نواز کی عیادت کے لیے نواز شریف اور ان کےبچوں کے ساتھ مسلم لیگ نون کے صدر شہباز شریف بھی لندن میں موجود ہیں۔شہباز شریف نے کلثوم نواز کی عیادت کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کے ڈاکٹرز کلثوم نواز کی حالت کی مسلسل مانیٹرنگ کررہے ہیں اور نواز شریف اور مریم نواز کو ابھی لندن میں رکنا چاہیے۔ان کے علاوہ کئی سیاسی رہنما اور شخصیات کلثوم نواز کی عیادت کےلیے اسپتال آئے ۔جس میں سلمان شہباز اور معروف کاروباری شخصیت میاں منشاء بھی شامل ہیں ۔ پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کی خصوصی ہدایت پر پی ٹی آئی کےوفد نے بھی بیگم کلثوم نواز کی عیادت کی ، پھول پیش کیے اور نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں